Type to search

ویڈیوز

موہنجو داڑو کو مکمل تباہی کا خطرہ لاہک ہے

موہنجو داڑوکے حیرت انگیز آثار قدیمہ 1922 ء میں دریافت ہوئے ۔ بعد میں آنے والے برسوں میں ان کی کھدائی کا کام جاری رہا۔ اب یہ آثار دریائے سندھ کے کٹاؤ کی زد میں ہیں۔ ان کے مکمل طور پر تباہ ہوجانے کا خطرہ منڈلارہا ہے ۔ 18 ویں ترمیم کے بعد اس مقام کا تحفظ صوبائی حکومت کی ذمہ داری تھی ۔ تاریخی اہمیت رکھنے کے باوجود یہ آثار غفلت کا شکار ہیں۔ ان کے تحفظ کے لیے سنجیدگی کی ضرورت ہے۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Comment moderation is enabled. Your comment may take some time to appear.